غیر قانونی ٹاؤن کی مد میں حکومتی خزانے کو کروڑوں کا چونا

حاصل پور(نماٸندہ سٹی اپڈیٹ )نواحی گاوں کے رہاٸشی محنت کش نے وزیر اعظم پاکستان۔چیف جسٹس لاہور ہاٸی کورٹ ۔وزیر اعلی پنجاب کو درخواستیں ارسال کرتے ہوٸے موقف اختیار کیا ہے کہ ساٸل چک 184مراد تحصیل حاصل پور ضلع بہاولپور کا رہاٸشی ہے۔مسمی ماسٹر محمد خالد ولد شاہ محمد وغیرہ ذات جٹ سکنہ چک نمبر 188مراد حاصل پور نے زرعی رقبہ کھیوٹ نمبر 7کھتونی نمبر 36تا40کو غیر قانونی طور پر سکنی بنا کر فروخت کیا ہے۔

رقبہ مذکورہ میں نہ تو سیوریج سسٹم ۔نہ تارکول سٹرک نہ واٹر سپلاٸی اور نہ ہی رجسٹر یشن ہوٸی ہے۔مرے والدمحمد شریف ولد علم دین اور میرے تایا غلام علی ولد علم دین نے اڑھاٸی اڑاھاٸی مرلہ کے دوپلاٹ خرید کٸے تھے۔جن کی ایک پانچ مرلے کی رجسٹری ہوٸی۔جن کے باقاعدہ انتقال درج ہیں۔میرے تایا غلام علی کو پلاٹ کا قبضہ موقع پر دے دیا گیا ہے۔جبکہ مجھے دینے کاوعدہ کرکے اب صاف انکاری ہو گٸے ہیں۔اس سلسلے میں دوخواست اسٹنٹ کمشنر حاصل پور کو دی گٸی۔جنہوں نے تحصلیدار کو مارک کردی۔ان کے حکم پر حلقہ پٹواری نے دونوں فریقین کو موقع پر بلایا۔معززین اور صحافیوں کی موجودگی میں حلقہ پٹواری علی اصخر نے تصدیق کی۔کہ ٹاون غیر قانونی طور پر بنایا گیا۔جس سے حکومت کو ٹیکس کی مد میں لاکھوں روپے کانقصان پہنچایا گیاہے۔اور ایک رجسٹری پر ایکبھاٸی کو قبضہ دے دیا گیا دوسرے کو دینے سے انکاری ہیں۔اے سی صاحب نے فرمایا کہ آپ عدالت سے حکم لیکر آٸیں۔مشترکہ کھاتہ ہے۔جب ان کو کہا گیا کہ موقع پر ایک بھاٸی کو قبضہ دیا گیا ہے۔اس لیے ونڈے اور نشاندھی کی ضرورت نہ ہے۔مگر صاحب بہادر نے معذرت کرلی۔جناب عالی مذکورہ غیر قانونی ٹاون بنا کر اور ہم سے رقم وصول کرکے انتقال درج ہونے کے باوجود قبضہ نہ دیکر دھوکہ فراڈ کیا گیا ہے۔آپ سے استدعا ہے ۔کہ غیر قانونی ٹاون بنانے والوں کے اور ان کی پشت پناہی کرنے والے بااثر افراد کے خلاف کارواٸی عمل میں لاکر مجھے موقع پر پلاٹ کاقبضہ دلایا جاٸے۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔محمد بوٹا ولد محمد شریف ذات جٹ سکنہ چک نمبر 184 مراد تحصیل۔۔ حاصل پور ضلع بہاولپور۔۔۔۔۔۔۔۔راناقمرالطاف۔۔ حاصل پور

اپنا تبصرہ بھیجیں